preloader
(Menopause) سن یاس

سن یاس (Menopause)

ہر عورت کوزندگی میں بہت سی جسمانی تبدیلیوں سے گزرنا پڑتا ہے جن میں بلوغت کے وقت ماہواری کا شروع ہونا ،حمل اور سن یاس شامل ہیں مگر حیرت کی بات یہ ہے کہ ایک عام عورت کو ان کے متعلق بنیادی معلومات تک حاصل نہیں ہوتیں۔ اس کی ایک بڑی وجہ ہمارے یہاں خواتین کی صحت کے مسائل کو شرم و حیا کی وجہ سے ڈسکس نہ کرنا

ہے جس وجہ سے بہت سی خواتین لمبا عرصہ تکلیف میں گزارتی ہیں۔
عورت کی زندگی کے ان فطری مراحل میں سن یاس یعنی حیض کا بند ہونا بھی شامل ہے ۔ یہ عمل پچاس سال کے لگ بھگ شروع ہوتا ہے اور تقریبا ایک سال میں مکمل ہو جاتا ہے. یہ اصل میں عورت کی تولیدی صلاحیت کے خاتمے کا اعلان ہے۔اسٹروجن ہارمون کی کمی کی وجہ سے جسم میں بہت سی تبدیلیاں رونما ہوتی ہیں مگر ان تبدیلیوں سے ناواقفیت کی بنا پر عورتیں سن یاس کی علامات سے پریشان ہو جاتی ہیں اور ان کی صحیح رہنمائی کرنے والا کوئی نہیں ہوتا۔ وہ مختلف ڈاکٹر کے پاس جاتی ہیں۔ درد کی دوائیں، انجکشن، طاقت کی ڈرپس وغیرہ لگاتی رہتی ہیں۔ اگر حیض کے بند ہونے کو ایک فطری عمل کے طور پر لیا جائے اور اس کی آگاہی دی جائے تو غیر ضروری اسٹریس سے بچا جا سکتا ہے۔

۔۔۔ سن یاس کی علامات ۔۔۔۔۔

۔ ماہواری میں وقفہ زیادہ ہونا اور پھر بتدریج بند ہو جانا
۔ جسم میں گرم لہریں محسوس ہونا
۔ زیادہ پسینہ آنا
۔ دل کی دھڑکن تیز ہونا
۔ وزن کا بڑھنا
۔ پیشاب کے مسائل ہونا جیسے پیشاب میں جلن یا رک کر پیشاب آنا
۔ ڈپریشن اور یاداشت کا کمزور ہونا
۔ جسم اور جوڑوں میں درد کا ہونا
۔ بالوں کا گرنا
۔ دل کے امراض کا رسک زیادہ ہونا
سن یاس کی علامات کو کیسے قابو کیا جا سکتا ہے؟
۔ خوش رہا کریں۔ اسٹریس اور ٹینشن سے بچیں۔
۔ رات کو مکمل پرسکون نیند لیں۔
۔ ہلکے کپڑے پہنیں اور ٹھنڈے ماحول میں رہیں۔
۔ ورزش ضرور کریں اور ایکٹو لائف سٹائل اختیار کریں۔
۔ کھانے پینے میں کیفین والی اور زیادہ مرچوں والی چیزوں سے پرہیز کریں
۔ دودھ کا استعمال لازمی کریں۔
۔ متوازن غذا کھائیں جس میں وائٹامنز موجود ہوں۔
۔ا گر علامات ناقابل برداشت ہوں تو ڈاکٹر سے رجوع کریں۔ ہڈیوں کے بھربھرے پن، ڈپریشن اور گرم لہروں کے لیے بہت سی دوائیں دستیاب ہیں جو ان علامات کو کنٹرول کرتی ہیں۔

” نوٹ”
۔ اگر سن یاس مکمل ہونے کے بعد اچانک ماہواری شروع ہو جائے تو یہ خطرے کی علامت ہے اور اس کے لیے فوراً ڈاکٹر سے رجوع کریں۔
۔ کچھ خواتین میں سن یاس کی علامات جلدی ظاہر ہونے لگتی ہیں۔ اس کی کئی وجوہات ہو سکتی ہیں۔ اس صورت میں بھی ڈاکٹر سے لازمی رجوع کریں۔
مذید معلومات یا ڈاکٹر سے معائنے کے لئے رابطہ کریں

Author

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *